چینی ماہرین کی پنجاب میں لاک ڈاؤن میں 28 روز تک توسیع کی تجویز

لاہور کا دورہ کرنے والے چینی ڈاکٹروں نے پنجاب حکومت کو صوبے کو کورونا وائرس سے بچانے کے لیے موجودہ لاک ڈاؤن میں 28 روز کی توسیع کی تجویز دی ہے اور کہا ہے کہ بعد میں بتدریج اور احتیاط سے حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے پابندیاں ختم کرنا شروع کردیں۔

چینی وفد کی قیادت کرنے والے ڈاکٹر مامنگ ہوئی نے اس موسم گرما کی آمد کے ساتھ ہی کورونا وائرس کے خاتمے کی افواہوں کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ’گرم موسم میں کوروناوائرس پھیلنے کے امکان کو مسترد اور نظرانداز نہیں کیا جاسکتا‘۔

چینی ڈاکٹروں اور ایک چیف نرس کے وفد نے اتوار کے روز وزیر اعلٰی سکریٹریٹ میں وزیر اعلٰی پنجاب عثمان بزدار سے ملاقات کی۔اس ملاقات میں محکمہ صحت کے سیکریٹریوں کے علاوہ وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد بھی موجود تھیں

چینی ماہرین نے کہا کہ سماجی دوری کے اقدامات لوگوں کو کورونا وائرس سے بچانے میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔انہوں نے حکومت کو یہ بھی تجویز دی کہ یہ زیادہ مناسب ہوگا کہ کورونا وائرس کے مریضوں کو گھر میں رکھنے کے بجائے انہیں ہسپتال میں داخل کیا جائے یا قرنطینہ مرکز میں رکھا جائے۔

چینی ڈاکٹروں نے کہا کہ پلازما کا استعمال تششویش ناک حالت میں مبتلا مریضوں کی جان بچانے میں فائدہ مند ثابت ہوا ہے۔انہوں نے مشورہ دیا کہ متاثرہ مریضوں کے لیے تین اینٹی وائرل دوائیوں کا استعمال کارآمد ثابت ہوا ہے۔

ایک چینی ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ ’بعض اوقات میں کورونا وائرس کے علامات ظاہر نہیں ہوتے ہیں اور بہتر مدافعتی نظام رکھنے والے افراد جلد صحتیاب ہوجاتے ہیں جبکہ کورونا وائرس بوڑھوں اور دیگر بیماریوں میں مبتلا افراد کے لیے خطرناک ثابت ہوسکتا ہے‘

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے