بیٹوں نے بوڑھے والدین کو گھر سے نکال دیا، ڈی پی او جہلم کا فوری ایکشن، مقدمہ درج کرنے کا حکم

بیٹوں نے بوڑھے والدین کو گھر سے نکال دیا، ڈی پی او جہلم کا فوری ایکشن، مقدمہ درج کرنے کا حکم

پنڈدادنخان: ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڈ کی کھلی کچہری میں بوڑھے والدین کی دہائی، محمد اسلم کا اینی بیوی کے ہمراہ کھلی کچہری میں انصاف کا مطالبہ، تین بیٹوں نے گھر سے بے دخل کر دیا ہے، مبینہ طور پر تشدد کا نشانہ بناتے رہے، ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڈ کا فوری ایکشن والدین پروڈکشن ایکٹ کے ٹکٹ مقدمہ درج کرنے کا حکم جاری کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڈ نے پنڈدادنخان کا دورہ کیا جہاں انہوں نے کھلی کچہری لگائی، کھلی کچہری کے دوران نواحی گاؤں غریب وال​​​​​​​سے محمد اسلم نامی شخص کا اپنی بیوی کے ہمراہ انصاف کا مطالبہ، ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڈ نے فوری ایکشن لیتے ہوئے محمد اسلم کی درخواست پر مقدمہ درج کرنے کا حکم جاری کر دیا۔ محمد اسلم نے کھلی کچہری میں بتایا کہ اسکے تین بیٹے مبینہ طور پر میرے مکان پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں ہیں جس کے لیے وہ مجھے اور میری بیوی کو مبینہ تشدد کا نشانہ بناتے ہیں، مجھےتحفظ فراہم کیا جائے جس پر ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڈ نے فوری نوٹس لیتے ہوئے محمد اسلم کی درخواست پر فوری مقدمہ درج کا حکم دیا۔ ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڈ نے آج پنڈدادنخان میں کھلی کچہری کا انعقاد کیا تھا، اس موقع پر DSP پنڈدادنخان سرکل محمد سلیم خٹک، انسپکٹر عابد حسین SHO تھانہ للِہ، سب انسپکٹر محمد نثار SHO تھانہ پنڈدادنخان، سب انسپکٹر محمد فیصل SHO تھانہ جلالپور شریف، سب انسپکٹر عثمان تصدق انچارج پولیس چوکی کھیوڑہ، اسسٹنٹ سب انسپکٹر محمد ارسلان انچارج پولیس چوکی دھریالہ جالپ، اسسٹنٹ سب انسپکٹر عمران حسین انچارج پولیس چوکی سٹی پنڈدادنخان اس کے علاوہ تھانہ جات و چوکیات میں تعینات تفتیشی افسران اور نمائندگان پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا سمیت لوگوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے کہا کہ کھلی کچہری میں پیش ہونے والے سائلین کی درخواستوں کا میرے آفس میں الگ ریکارڈ رکھا جاتا ہے جس پر ہفتہ وار رپورٹ طلب کی جاتی ہے۔ سائلین سے گزارش ہے کہ آپ اپنی بات کھل کر بتائیں تاکہ کم سے کم وقت میں آپ کا مسئلہ حل ہو سکے۔ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے کھلی کچہری میں آئے ہوئے سائلین و میڈیا نمائندگان کے پیش کردہ انفرادی و اجتماعی مسائل کو فرداً فرداً سنا اور موقع پر ہی ان کے ازالے کے احکامات جاری کئے۔ کھلی کچہری میں پیش ہونے والے سائلین شگفتہ پروین ساکن جلالپور شریف، رضیہ بیگم ساکن پنڈدادنخان، زرناب ساکن پنڈدادنخان، محمد ذوالقرنین ساکن للِہ ہندوانہ، شہزاد اختر ساکن سگھر پور، نصیر احمد ساکن کریم پور پنڈدادنخان، بشیر حسین ساکن کھیوڑہ، گل شیر ساکن پنڈدادنخان، بشارت حسین ساکن چک جانی، محمد اسلم غریب وال، عبد الرحمٰن ساکن چک شادی، محمد اعجاز/شمائلہ جاوید ساکن جلالپور شریف، محمد کامران ساکن چوٹالہ، واجد حسین ساکن پنڈدادنخان، محمد فاروق پننوال، محمد فاروق ساکن للِہ، نواز اقبال ساکن پنڈدادنخان، عمیرا ارشد ساکن کھیوڑہ، خواجہ بخش/مقصود اقبال ساکن پنڈدادنخان، خضر حیات ساکن پنڈدادنخان اور اظہر حیات ساکن جلالپور شریف وغیرہ نے باری باری اپنے انفرادی مسائل بیان کئے جس پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے موقع پر ہی انکے ازالے کے احکامات جاری کئے۔ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میرا علاقہ تھانہ پنڈدادنخان سرکل میں کھلی کچہری لگانے کا مقصد صرف اور صرف یہ ہے کہ وہ لوگ جو ہیڈ کوارٹرز سے دور ہیں اور میرے دفتر آسانی سے نہیں آسکتے میں خود ان کے پاس آؤں اور انکے مسائل کو حل کرسکوں۔ کھلی کچہری میں سائلین کی تھانہ پنڈدادنخان، تھانہ جلالپور شریف اور تھانہ للِہ سے متعلق شکایات پر DSP پنڈدادنخان سرکل محمد سلیم خٹک کو موقع پر ہی سائلین کی میرٹ پر دادرسی کرنے کے سخت احکامات جاری کیے۔ بعد ازاں ڈی پی او جہلم شاکر حسین داوڈ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انصاف کی فراہمی یقینی بنانا ہماری ذمہ دادی ہے، حکومت کی جاری کردہ ہدایات پر عمل کرتے ہوئے کسی بھی درخواست پر فوری مقدمہ درج کیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا تفتیشی افسران کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی سائل کی درخواست پر فوری مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کی جائے۔

Share

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے