پاکستان، افغانستان میں دیرپا قیام امن کیلئے جامع سیاسی تصفییے کو ضروری سمجھتا ہے۔شاہ محمود قریشی

پاکستان، افغانستان میں دیرپا قیام امن کیلئے جامع سیاسی تصفییے کو ضروری سمجھتا ہے۔شاہ محمود قریشی

اسلام آباد ( ویب ڈیسک) شاہ محمود قریشی نے سیکریٹری جنرل او آئی سی اور مختلف ممالک کے وزرائے خارجہ سے رابطہ کر کے اس بات پر زور دیا ہے کہ عالمی برادری افغان معیشت، تعمیر نو اور بحالی میں اپنا کردار ادا کرے۔سیکریٹری جنرل او آئی سی یوسف بن احمد کیساتھ بھی افغانستان صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا اور افغانستان میں قیام امن کے لیے عزم کا اظہار کیا گیا۔پاکستان کے وزیرخارجہ نے جرمن ہم منصب ہائیکو ماس کو بھی ٹیلیفون کیا ہے۔ دونوں وزرائے خارجہ نے افغانستان میں امن واستحکام کی اہمیت پر تبادلہ خیال کیا۔شاہ محمود نے کہا کہ عالمی برادری افغان معیشت اور افغانیوں کی مدد میں اپنا کردار ادا کرے۔بیلجیم ، روس، جرمنی اور نیدرلینڈ کے وزرائے خارجہ سے رابطے کیے گئے ہیں۔ افغانستان میں موجود صورتحال اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال ہوا۔تمام وزرائے خارجہ نے اتفاق کیا کہ متفقہ بین الاقوامی تعاون افغان عوام کی خوشحالی کے لیے اہم ہے۔ افغانستان میں پھنسے سفارتکاروں کے انخلا پر بھی بات چیت ہوئی۔شاہ محمود نے کہا کہ سہ فریقی مذاکرات میں پاکستان اور روس نے امن کیلئے اہم کردار ادا کیا۔خطے میں امن و استحکام کیلئے افغانستان میں قیام امن ناگزیر ہے۔ پاکستان، افغانستان میں دیرپا قیام امن کیلئے جامع سیاسی تصفییے کو ضروری سمجھتا ہے۔

Share

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

close