نیشنل کرائم ایجنسی کے فیصلے پر حکومتی صفوں میں کہرام مچا ہوا ہے، مجھ پر لگایا گیا کونسا الزام ثابت ہوا ؟ شہباز شریف

نیشنل کرائم ایجنسی کے فیصلے پر حکومتی صفوں میں کہرام مچا ہوا ہے، مجھ پر لگایا گیا کونسا الزام ثابت ہوا ؟ شہباز شریف

لاہور (ویب ڈیسک) : شہباز شریف نے کہا کہ نیشنل کرائم ایجنسی کے فیصلے پر حکوتی صفوں میں کہرام ہے۔ مجھ پر اور نواز شریف پر بے پناہ الزامات لگے مگر آج تک ایک دھیلے کی کرپشن کے ثبوت نہیں ملے۔ مسلم لیگ ن کے صدر اور اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہباز شریف نے نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سوا تین سال میں طوفان بدتمیزی مچا رہا، اربوں کے الزامات لگے۔
انہوں نے کہا کہ ،عزت اور ذلت اللہ کے ہاتھ میں ہے ،چاہتا ہوں حقائق سے آگاہ کروں۔ نیب، ایف آئی اے کو ایک دھیلے کی کرپشن کا ثبوت نہیں ملا، اب حقائق پوری قوم کے سامنے آچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھ پر لگایا گیا کونسا الزام ثابت ہوا؟ ملتان میٹرو کی پوری چھان بین کی گئی۔ ڈیلی میل میں میرے خلاف اسٹوری چھپوائی گئی۔ مجھ پر الزام تھا کہ میں نے ڈیفیڈ کے لاکھوں پاؤنڈز کھائے ہیں،میری صفائی میں حکومت برطانیہ نے خود بیان دیا کہ کوئی کرپشن نہیں کی۔

ڈیوڈ روز کو پاکستان بلاکر عمران نیازی سے ملوایا گیا،اس کی اسٹوری کا کیا حشر ہوا ،وہ آپ نے دیکھ لیا، ڈیلی میل اسٹوری میں رتی بھرسچائی ہوتی تومجھ سےرقم نکلوالیتے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اور پارٹی ارکان کو جیل بھجوایا گیا، کیا نکلا ؟ سب نے صریحاً جھوٹ بولا، نیب، ایف آئی اے میں ہم پر اربوں، کھربوں کے الزامات لگائے گئے۔ عمران خان اور ان کےحواری مجھ اورخاندان پر تہمتیں لگاتے رہے،برطانیہ کی تحقیقاتی ایجنسی کی رپورٹ نے تمام الزامات رد کیے، حکومت کی فوج ظفر موج ٹی وی پر دن رات پراپیگنڈا کرتی رہی۔
شہباز شریف نے کہا کہ عمرا ن خان کے اسپیشلسٹ نےکہا جو ہم نے لکھا اس میں منی لانڈرنگ کا ذکر نہیں،این سی اے نے کہا کہ ہمیں دسمبر 2019ء کوایسیٹ ریکوری یونٹ کی درخواست ملی، برطانیہ نے ایسیٹ ریکوری یونٹ کی درخواست پر سلمان شہباز کے اکاؤنٹ منجمد کیے۔ انہوں نے کہا کہ این سی اے نے لندن کی عدالت میں دستاویزات جمع کروائیں، 11 دسمبر کو اے آر یو کی جانب سے این سی اے کو خط ملا، قوم کو دھوکا دینے کے لیے انہوں نے جھوٹ بولا، یہ لوگ میرے اور بیٹوں کے خلاف این سی اے گئے، این سی اے نے دستاویزات مانگی نہیں، انہوں نے خط لکھا، 9 دسمبر 2019ء کو این سی اے حکام کی شہزاد سلیم سے ملاقات ہوئی۔
حکومت نےتاثردیاکہ این سی اے نےخودرابطہ کیا،این سی اے نےکہا ہم نے تحقیقات ختم کردیں،عدالت نےٹھپہ لگا دیا۔ میں نے 2 مرتبہ جیلیں کاٹی ہیں، عمران خان کا بس چلے تو آج بھی جیل بھجوا دے، مجھے 2005ء میں زلزلےکے دوران جلاوطن کیا گیا۔ مجھے بدنام کرنے میں کوئی سازش نہیں چھوڑی گئی۔ قدرت کا نظام ہے، وقت ثابت کرے گا کون صادق اور امین ہے، کیا علیمہ خان کی مشینوں کا کیس این سی اے کو بھیجا ؟ یہ سنگین مذاق اب ختم ہونا چاہیئے۔
اُن کا کہنا تھا کہ ہم پر نیب اور ایف آئی اے میں بھی کھربوں کے الزامات عائد ہوئے،بڑے بھائی کو بھی جیل میں گھسیٹنے کی کوشش کی گئی،نیب نیازی گٹھ جوڑ میں دو رائے نہیں۔ یہی نہیں اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی شہبازشریف نے پریس کانفرنس میں وزیراعظم اور وفاقی وزرا کے بیانات بھی چلائے۔

Share

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

close